تعمیر نیوز - تازہ ترین

ہندوستان: ہندوستان: شمالی ہند: جنوبی ہند: مشرقی مغربی ہند: تجزیہ: تجزیہ:
ہند - تاریخ/تہذیب/ثقافت: تاریخ دکن: مسلمانان ہند: کلاسیکی ادب: اردو ہے جسکا نام: ناول: جنسیات:

بتاریخ : ‪2012-05-05

بجلی تیرا نام کتنا پیارا ، میں تو گیا مارا

بجلی کی کمیابی کے مسئلے پر ایک منی کہانی نظر سے گزری۔ کہانی کے بنگلہ دیشی مصنف ہیں : چودھری فردوس
لیجیے ملاحظہ فرمائیں ۔۔۔۔

***

سن : 2012
پہلا دوست : یار لائیٹ کب آئے گی؟
دوسرا دوست: ہمارے علاقے سے جب جائے گی تب تمہارے علاقے میں آئے گی

سن : 2015
پہلا دوست : یار سنا ہے آج لائیٹ آئے گی؟
دوسرا دوست: جھوٹ ۔۔۔۔ ! آج راج شاہی میں آئے گی کل باریسال میں

سن : 2022
پہلا دوست : سنا ہے ، پہلے لائیٹ آتی تھی؟
دوسرا دوست : دماغ مت چاٹو ۔۔۔ یہ سب قصے کہانیوں کی باتیں ہیں۔ سو جاؤ اور مجھے بھی سونے دو

سن : 2025
پہلا دوست : یار ! لائیٹ ۔۔۔۔
دوسرا دوست : گالی کیوں بکی ؟

5 تبصرے:

افتخار اجمل بھوپال نے لکھا ۔۔۔

کمال ہے جی ۔ یہ کہانی پاکستان کے شہروں کے ناموں کے ساتھ پچھلے سال پاکستان میں گردش کر رہی تھی

SHUAIB نے لکھا ۔۔۔

تمہارے یہاں سعودی عرب میں بجلی جاتی نہیں، پھر یہ پوسٹ کس کو تحفہ کرنے لکھی ہے

Hyderabadi نے لکھا ۔۔۔

افتخار اجمل بھوپال : میں نے تو یہ کہانی فیس بک پر کل ہی پڑھی تھی۔ معلوم نہیں تھا کہ بنگلہ دیش سے پہلے یہ کہانی پاکستان میں بھی گردش کرتی رہی ہے۔
SHUAIB : جی بھائی ، درست ہے کہ یہاں بجلی جاتی نہیں ۔۔۔ مگر کہانی اچھی لگی ، سو شئر کر دیا۔

Rashid Idrees Rana نے لکھا ۔۔۔

بھائی یہ کہانی تو کچھ سنی سنی، دیکھی دیکھی، بیتی بیتی لگ رہی ہے، یوں لگ رہا ہے اپنے ہی گھر کی بات ہو۔

ایک اچھا جملہ ہے کہ:

ہم نے اپنے بڑوں سےسنا ہے پرانے وقتوں میں بجلی ہوا کرتی تھی۔

اچھی تحریر ہے بلکل منہ بولتی تحریر ہے۔

علی نے لکھا ۔۔۔

بہت عمدہ جی بہت عمدہ

تبصرہ میں مسکانوں کے استعمال کیلئے متعلقہ مسکان کا کوڈ کاپی کریں
:));));;):D;):p:((:):(:X=((:-o
:-/:-*:|8-}:)]~x(:-tb-(:-Lx(=))

تبصرہ کیجئے