تعمیر نیوز - تازہ ترین

ہندوستان: ہندوستان: شمالی ہند: جنوبی ہند: مشرقی مغربی ہند: تجزیہ: تجزیہ:
ہند - تاریخ/تہذیب/ثقافت: تاریخ دکن: مسلمانان ہند: کلاسیکی ادب: اردو ہے جسکا نام: ناول: جنسیات:

بتاریخ : ‪2008-12-16

شدت پسند ۔۔۔۔

شدت پسند ۔۔۔۔ گوہر رضا (دلّی‫)

مجھے یقین تھا ، کہ مذہبوں سے
کوئی بھی رشتہ نہیں ہے اُن کا
مجھے یقین تھا ، کہ ان کا مذہب
ہے نفرتوں کی حدوں کے اندر
مجھے یقیں تھا ، وہ لامذہب ہیں
یا ان کے مذہب کا نام ہرگز
سوائے "شدت" کے کچھ نہیں ہے

مگر اے ہمدم
یقیں تمہارا جو ڈگمگایا
تو کتنے انساں ، جو ہم وطن تھے
جو ہمنشین تھے ، جو ہمسفر تھے
وہ ٹھہرے دشمن

تلاشِ قاتل جو شرط ٹھہری ، تو بھول بیٹھے
کہ مذہبوں سے کوئی بھی رشتہ نہیں ہے اُن کا
وہ جس کو طعنہ دیا تھا تم نے
کہ اُس کے مذہب کی کوکھ قاتل اُگل رہی ہے
وہ جس کے گھر کے چراغ تم نے بجھا دئے تھے
وہ ماں ، کہ جس کا جواں بیٹا
تمہارے وہم و گماں کی آندھی میں گُم ہوا ہے
تمہارے بدلے کی آگ جس کو نگل گئی ہے
وہ دیکھو اب بھی بلک رہی ہے

وہ منتظر ہے ، کوئی تو کندھے پہ ہاتھ رکھے
کہے کہ ہم نے بھی قاتلوں کی کہانیوں پر یقیں کیا تھا
کہے کہ ہم نے گناہ کیا تھا
کوئی تو کندھے پہ ہاتھ رکھ کے
کہے کہ ماں ! ہم کو معاف کر دو ‫!!
بشکریہ : ممبئی دھماکوں پر ایک نظم


پسِ تحریر ‫:
دہشت گرد کو دہشت گرد ہی کہنا چاہئے۔ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ دہشت گرد انڈیا کا ہندوتوا علمبردار بھی ہو سکتا ہے اور پاکستان کے کسی لشکر کا "مجاہد" بھی۔
ہندوستانی اور پاکستانی برادران کو دہشت گردی کے معاملات پر بحث کرتے ہوئے مذہب کو درمیان میں لانے سے گریز کرنا چاہئے۔

دنیا کے کسی بھی ملک یا کسی بھی قوم میں مبینہ دہشت گرد یقینی پائے جاتے ہیں ، کسی خاص ملک کی تخصیص نہیں ہے۔ اگر کراچی کے کسی نسلی فساد میں کوئی "موومنٹ" ہندوتوا علمبرداروں یا راء کو ‫hire کر سکتی ہے تو اس بات میں بھی شبہ نہ ہونا چاہئے کہ ممبئی دھماکوں میں ہندوتوا قوتوں نے کسی "لشکر" کے "مجاہدین" کو ‫hire کیا ہوگا تاکہ مالیگاؤں دھماکوں کی حقیقت کو (آنجہانی) ہیمنت کرکرے آشکار نہ کر جائے ‫!!

0 تبصرے:

تبصرہ میں مسکانوں کے استعمال کیلئے متعلقہ مسکان کا کوڈ کاپی کریں
:));));;):D;):p:((:):(:X=((:-o
:-/:-*:|8-}:)]~x(:-tb-(:-Lx(=))

تبصرہ کیجئے